")
امام على عليہ ‏السلام دشمنوں کے مقابلے میں
معصومین

حضرت على  عليه ‏السلام محروموں، ناداروں اور مستضعفوں کے بہت هی زیادہ حامی و طرفدار تھے اور اگر ان کی حکومت میں کوئی نادار، غریب ، مستضعف ، بھوکا اور پیاسا یا لا وارث و بے سرپرست زندکی گزارتا تھا تو آپ کو چین و سکون سے نیند نہیں آتی تھی لیکن دوسری طرف دیکھا جائے تو دشمنوں کے مقابلے میں بے باک اور نڈر رها کرتے تھے . آپ (ع) اپنے ایک خطبے میں ارشاد فرماتے هیں: خدا کی قسم اگر میں میدان جنگ میں دشمن کے مقابلے میں اکیلا رهوں جب که دشمن پوری زمین میں بکھرے هوئے هوں تو میں ان کو ذرّه برابر اهمیت نهیں دوں گا اور ذرّه برابر خوف و هراس بهی میرے دل میں نهیں آئے گی اور نه میں خوف زده هوں گا .