")
پیغمبر (ص) کی بعثت اور
معصومین

پیغمبر (ص) کی بعثت کے زمانے میں   لوگ فکری اور عملی اعتبار سے حیرانی و پریشانی اور فتنہ انگیزی میں مبتلا تھے۔ ان کی خودپسندی نے انھیں بے ثبات و بے قرار اور جاہلیت کے نظام نے انھیں سبک اور ناقابل اہمیت بنا دیا تھا ۔

پیغمبر (ص) ایسے شرائط و حالات میں مبعوث ہوئے اور لوگوں کی پند و نصیحت کے لئے بہت سعی و کوشش کی ۔

حضرت على عليه‏ السلام فرماتے ہیں:

 

اللہ نے ان کو ایسے وقت میں بھیجا کہ جب  انبیاء (ع) نہیں تھے اور لوگ ایک لمبی اور گہری نیند میں سو رہے تھے ۔ فتنہ کے گھوڑے بے لگام  تھے ، کاموں میں انتشارپایا جاتا تھا  ، جنگ کی آگ بھڑکی ہوئی تھی، دنیا میں اندھیرا چھایا تھا اور دنیا داری کا فریب و دھوکہ سب پر غالب تھا ۔۔۔  ان کے اندر خوف و ہراس ، ان کے باہر موت کی تلواریں  تھیں ، لہذا اے اللہ کے بندو!  عبرت حاصل کرو