")
قرآنی نقطہ نظر سے ماحولیات کے موضوع پر پہلا ھفتہ وار علمی اجلاس، مرحوم آیت الله العظمی موسوی اردبیلی (رحمة الله علیه) کے دفتر میں حجت الاسلام و المسلمین سعید رهائی کے تقریر سے منعقد ھوا ۔
1/22/2017
اس نشست میں قرآنی نقطہ نظر سے سورہ سبا کی آیات کے مطابق ماحولیات پر بحث و گفتگو کی گئی ۔

اس نشست کا خلاصہ:

  • سکونت اور رھنے کے لئے سرسبز اور آباد علاقہ کا انتخاب
  • خدا کی عطا کی ھوِئی قدرتی نعمتوں سے حسبِ ضرورت، حساب و کتاب کے مطابق استفادہ کرنا اور اس میں افراط و تفریط نہ کرنا ۔
  • خدا داد قدرتی و فزیکل نعمتوں پر شکر کا واجب ھونا ۔
  • بلدة طیبة و رب غفور کے معنی یہ ھیں کہ پاکیزہ اور سکونت کے شہر و علاقہ کا آباد ھونا، جو اللہ تعالی کی مغفرت کے ساتھ ھو ۔
  • ماحولیات و محل سکونت کی دیکھ بھال، یتیموں کی امداد، عدالت و مساوات کی رعایت اور اللہ کی عطا کی ھوئی نعمتوں میں فضول خرچی نہ کرنا " بلدة طیّبه " تک پہنچنے کے شرائط میں سے ھے ۔
  • آیہ یعنی ھر وہ چیز کہ جس میں غور و فکر کے ذریعہ ایک بلند و بالا معنی ھمیں حاصل ھو ۔
  • آیہ دلیل التزامی کے لحاظ سے غور و فکر اور تدبر پر بھی دلالت کرتی ھے ۔
  • ناشکری، کفر کے معنوں میں سے ایک معنی ھے ۔