")
روزہ رکھنا اور کارکردگی میں کمی واقع ھونا
سوال: بندہ ایک مزدور اور کاریگر ھوں اور روزہ رکھتا ھوں مگر روزہ رکھنے کی وجہ سے جتنا کام کرنا چاھئے اتنا کام نھیں کرسکتا ھوں اور کمزوری کی بناپر عادی طورپر کام بھی نھیں کرسکتا ھوں، اور چھٹی بھی نھِیں لے سکتا ھوں، البتہ سردی کے موسم میں روزہ رکھنے میں کوئی مشکل نھیں ھے، کیا جو مزدوری مجھے ملتی ھے وہ شرعی لحاظ سے حلال ھے ؟۔
جواب: کارکردگی کی مقدار کی بہ نسبت اگر کام کا مالک رمضان کے مھینہ میں دینی وظیفہ کی انجام دھی کی بنیاد پر ھرچند مزدوری کو کم دینے پر راضی ھو، تو روزہ رکھو، انشاء اللہ پروردگار عالم سلامتی اور برکت عطا کرے گا، البتہ اگر روزہ کا ضرر قابل تحمل نہ ھو جیسے انسان کو کام سے نکال دیا جائے جبکہ اس کے لئے کوئی دوسرا کام بھی میسر نہ ھو اور روزی و کسب معاش کے لئے ماہ رمضان میں بھی کام کرنا ضروری ھو تو روزہ کو چھوڑ سکتا ھے اور چھوٹے اور سردی کے دنوں میں ان کی قضا کرے ۔